ترکی میں بچوں کو نماز اور قرآن سکھانے کا عجیب انداز

<span class=" class="avatar avatar-200 wp-user-avatar wp-user-avatar-200 photo avatar-default" />
انٹرنیشنل
4
0
sample-ad

ترکی ایک ایسا ملک ہے جہاں بچوں کو نماز اور قرآن سکھانے کا انداز ہی مختلف ہے ، ترکی میں بچوں کی نفسیات کو دیکھتے ہوئے ان کی تربیت کی جا رہی ہے ، جب بچہ سات سال کا ہو جاتا ہے تو اسے نماز کی ترغیب دلانے کیلئے مقابلہ منعقد ہوتا ہے ، اس مقابلے میں اعلان کیا جاتا ہے کہ جو بچہ بھی فجر کی نماز چالیس دن تک باجماعت پڑھے گا تو اسے ایک خوبصورت اور قیمتی بائیسکل تحفہ کے طور پر دی جائے گی ، بچے جوق در جوق فجر کی نماز کی پابندی پورے چالیس دن تک کرتے ہیں اور جب انہیں انعام ملتا ہے تو پورے شہر میں جلوس نکالتے ہیں اور خوشی کے مارے پورے شہر کو نماز کی دعوت دیتے ہیں ۔ چالیس دن تک ان میں سے ہر ایک بچہ نمازی بننا سیکھتا ہے ۔ اکتالیسویں دن سے وہ نماز کی دعوت دینے والا بن چکا ہوتا ہے۔

جب ترکی میں گرمیوں کی چھٹیاں ہوتیں ہیں تو مسجدوں میں قرآن حفظ کرنے کے سمر کیمپ لگائے جاتے ہیں ، جنہیں حفظ القرآن سمر کیمپ کہا جاتا ہے۔ ان سمر کیمپس میں بچوں کو اتنا قرآن ضرور یاد کرا دیا جاتا ہے جن میں بنیادی سورتیں اور دعائیں شامل ہوتیں ہیں تاکہ پوری زندگی کچھ نہیں تو کم از کم نماز اچھے طریقے سے ادا کر سکے اور عمر بھر کے لیے ان کیلئے رحمت و برکت کا ذریعہ بن جائے۔ سمر کیمپس میں انہیں مسجد کی بہترین سہولت بھی دی جاتی ہے اور ساتھ ساتھ یہ اعلان بھی کیا جاتا ہے کہ جو مکمل قرآن حفظ کرے گا اسے عمرے کا ٹکٹ دیا جائے گا۔ بچے خوشی خوشی قرآن حفظ کرتے ہیں اور کامیاب بچوں کو عمرے کی سعادت نصیب ہوتی ہے ، ساتھ ساتھ اللہ کے گھر کا دیدار بھی نصیب ہوتا ہے۔

ترکی میں بچوں کی عربی ہینڈ رائٹنگ اچھی کرنے کیلئے اور عربی زبان سے محبت دلانے کیلئے جگہ جگہ خطاطی کا فن سکھانے کے ادارے کھلے ہوئے ہیں ۔ وہاں بچوں کو ہاتھ اور کمپیوٹر کی مدد سے عربی کیلیگرافی سکھائی جاتی ہے۔ اس کے علاوہ اسکائوٹس کی تربیت کے کیمپ لگائے جاتے ہیں جہاں بچوں کو دوسروں کی خدمت کیسے کی جائے ، یہ سکھایا جاتا ہے، کیسے وہ کسی کو تکلیف میں دیکھ کر دوڑ لگا کر اس کی مدد کر سکتے ہیں ۔ یہ چھوٹے چھوٹے فٹبال گرائونڈ ہوتے ہیں جہاں وردی میں کھیلنا ضروری ہوتا ہے ، کھیل کھیل میں ان کی جسمانی ورزش بھی ہوتی ہے اور ساتھ ساتھ دوسروں کی خدمت کا جزبہ بھی پیدا ہوتا ہے۔ ہر گرائونڈ میں جوس اور پانی کی مشینیں بھی رکھی ہوتی ہیں تا کہ کسی بچے کی انرجی کم نہ ہو۔اس کے علاوہ کچھ بچے سوئمنگ کے شوقین ہوتے ہیں ، انہیں بہت ہی کم فیس میں سوئمنگ سیکھنے کے مواقع فراہم کیے جاتے ہیں ۔

ترکی جغرافیائی اعتبار سے تو مغربی ممالک کے دہانے پر موجود ہے لیکن اس کے باوجود وہ لوگ اپنے بچوں کو مغربی کلچر سیکھانے کے بجائے نت نئے انداز سے اسلام کی تعلیم دیتے ہیں ۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.